Song no:

3

Volume no:

35

Poet Name:

Abdul Hameed Adam

Company:

Rehmat Gramophone House

Song Name:

Jab Mila Wo Kafa Mila

ایک  نئی  اُردو  غزل  آپ  کی  خدمت  میں  عرض  کروں  گا۔

جب   مِلا   وہ  خفا  مِلا    ہم    کو
بخت    کیا   چاند  سا   مِلا   ہم  کو


غیر    تو     رحم    دل    نہیں   ہوتے
یار   بھی   کج    اَدا   ملا    ہم   کو

بخت     کیا  چاند  سا   مِلا   ہم   کو
جب    ملا   وہ   خفا    ملا   ہم   کو

 

چند    رنگین   تہمتوں    کے    سوا
تیرے  چاہت  سے  کیا  ملا   ہم  کو

بخت    کیا  چاند  سا  مِلا  ہم   کو
​جب   ملا   وہ   خفا   ملا  ہم   کو

 

ہم نے  تو  یہ  راہ  چھوڑ دی تھی  مگر
تیرا    دَربان   آ    ملا      ہم    کو

بخت     کیا  چاند  سا  مِلا  ہم   کو
​جب   ملا   وہ   خفا   ملا   ہم   کو

 

چارہ   سازوں   کا   کوئی    جُر م  نہیں
درد  ہی  لا   دُعا    ملا     ہم    کو

بخت    کیا  چاند   سا   مِلا   ہم   کو
​جب   ملا   وہ   خفا    ملا   ہم   کو

 

سلطنت   مِل   گئی   عدمؔ   جِس  شب
گھر  میں   اِک   بوریا   ملا   ہم   کو

بخت   کیا  چاند   سا   مِلا   ہم   کو
​جب   ملا   وہ   خفا    ملا   ہم   کو